Self Improvement, Upbringing and Training

نوجوانوں کیلئے کچھ کام کی باتیں جن پر عمل کرکے زندگی بہتر بنا سکتے ہیں

Share on FacebookTweet about this on TwitterShare on StumbleUponPin on PinterestShare on LinkedIn

انسان کی زندگی کے پہلے 12 سال یعنی بچپن کھیل کود اور سیکھنے  کا زمانہ ہوتا ہے۔  اس کے بعد 13 سے 19 سال کی عمر یعنی لڑکپن جسے ”ٹین ایج“ کہتے ہیں، کو خوابوں کا زمانہ کہنا غلط نہ ہوگا۔ بچہ جب کافی کچھ سیکھ لیتا ہے تو وہ بڑے ہوکر کچھ کر دکھانے کے خواب دیکھنے لگتا ہے۔ ٹین ایج لڑکے خود کو محمد عامر سے تیز باؤلر، لیونل میسی سے اچھا فٹبالر، ٹام کروز سے بہتر ایکشن ہیرو، بل گیٹس سے زیادہ چالاک بزنس مین  اور عمران خان جیسا  سیاستدان سمجھنے لگتے ہیں جبکہ نوعمر لڑکیاں سمجھتی ہیں کہ وہ ثانیہ مرزا، انجلینا جولی، بے نظیر بھٹو، ماہرہ خان اور انجیلا مرکل وغیرہ  سے بھی زیادہ ذہانت اور قابلیت رکھتی ہیں۔

20 سال کے بعد زیادہ تر نوجوان تعلیم سے فارغ ہوکر عملی زندگی میں قدم رکھتے ہیں۔ اور 20 کی دہائی دراصل سپنے ٹوٹنے کا زمانہ ہے! جی ہاں، لڑکپن میں جو خواب دیکھے جاتے ہیں،  ان کی تعبیر نہ ملنے کی وجہ سے اس عمر کے بہت سے نوجوان مرد و خواتین مایوسی کا شکار ہوجاتے ہیں۔

امریکی خاتون مایا  کچرو –لاوین نے اپنے بلاگ میں 20 سالہ نوجوانوں کیلئے 50 اہم باتیں  لکھی ہیں۔ان میں سے کچھ بہترین ٹپس کا اردو ترجمہ  پیش خدمت ہے جو مایوسی کا شکار نوجوانوں کو ضرور پڑھنا چاہیئے۔

  1. خود کو بے کار مت سمجھیں، خود اعتمادی آپ کا سب سے بڑا سرمایہ ہے۔
  2. اگر کبھی یہ محسوس ہو کہ آپ کوئی غلط فیصلہ کر رہے ہیں تو زیادہ پریشان نہ ہوں۔ زندگی کبھی بھی غلطیوں سے پاک نہیں ہوتی لیکن ان غلطیوں کا ازالہ آپ کی سب سے اہم ترجیح ہونی چاہیئے۔
  3. اپنی غلطیوں کو تسلیم کرنے اور ان پر معذرت کرنے سے لوگوں میں آپ کی عزت بڑھ جاتی ہے۔
  4. برے لوگوں سے اچھے رویئے کی امید مت رکھیں۔ ایسے لوگوں کو نظر انداز کرنا ہی بہترین عمل ہے۔
  5. ہر وقت معذرت  خواہانہ لہجہ اختیار کرنے سے احساس کمتری پیداء ہوتی ہے۔
  6. کبھی کبھار ٹی وی دیکھنے میں کوئی حرج نہیں لیکن ”انٹرنیٹ کا کیڑا“ بننا آپ کی ذہنی اور جسمانی صحت کیلئے بہت خطرناک ہے۔
  7. پالتو جانور جیسے کتا یا بلی رکھنا اچھی بات ہے لیکن اگر آپ اس کی مناسب دیکھ بھال نہیں کرسکتے تو کوئی جانور نہ پالیں۔
  8. اپنی تمام ماہانہ بچت کو فضول خرچیوں پر اڑانے سے بہتر ہے کہ کچھ رقم سیونگ اکاؤنٹ میں محفوظ کرلیں جو برے وقت میں آپ کے کام آسکے۔
  9. بعض اوقات آپ کا مالک (باس) غلطی پر آپ کو ڈانٹ رہا ہوتا ہے اور بعض اوقات وہ غصے میں آکر ایسا کرتا ہے۔ ایسے میں اگر آپ نرم لہجے میں مناسب طریقے سے اسے جواب دیں گے تو اس سے معاملات بہتر ہوسکتے ہیں۔
  10. گاڑی/موٹرسائیکل چلاتے ہوئے، سڑک پار کرتے ہوئے یا کسی شخص سے اہم گفتگو کے دوران موبائل فون استعمال کرنے سے گریز کریں۔ سیر و تفریح کے دوران بھی فون کو کم ہی ہاتھ لگائیں تو بہتر ہے۔
  11. خوشی میں بہترین دوست اور برے وقت میں دور سے سلام۔ ایسی خود غرض دوستی بہت کم ہی چل پاتی ہے۔
  12. دوسروں کو یہ بتانے کی کوئی ضرورت نہیں کہ آپ خوبصورت ہیں لیکن اپنے لئے کچھ وقت نکال کر خوش شکل نظر آنے کیلئے میک اپ کرنا کوئی بری بات نہیں۔
  13. کسی کو یہ احساس مت ہونے دیں کہ آپ پیار کے قابل ہی نہیں۔ بات دراصل یہ ہے کہ آپ کو سمجھنا مشکل ہے لیکن پھر بھی دنیا میں کئی لوگ آپ سے پیار کرنے کی بہت سی وجوہات تلاش کر لیں گے!
  14. بہترین روزگار، منگنی/شادی اور بچے پیداء کرنے کیلئے کوئی مخصوص عمر مقرر نہیں ہے۔ یہ اہم مواقع ہر انسان کیلئے مختلف عمر میں آتے ہیں۔
  15. اگر آپ 20 کی دہائی عبور کرنے کے قریب ہیں مگر ابھی تک قابل ذکر کامیابی حاصل نہیں کر پائے تو بھی ہمت نہ ہاریں ۔ مشہور اداکاروں رے رومانو، ایلن رک مین اورڈینی  گلاور نے 30 سال کے بعد ہی شوبز کی دنیا میں قدم رکھا اور پھر اپنا مقام بنایا!
  16. محبت میں ناکامی کبھی بھی محبت نہ کرنے سے بہتر ہے۔
  17. اگر کسی ہائی سکول یا کالج کے کلاس فیلو سے آپ کی دوستی ٹوٹ جائے تو اس پر صرف خود کو قصوروار نہ سمجھیں۔ وقت کے ساتھ بہت کچھ بدل جاتا ہے۔
  18. دفتر میں کام کے دوران اپنی اصل کامیابی اور محنت کو مالک کے سامنے پیش کرنا خود غرضی نہیں۔
  19. آپ اپنے والدین سے سیاسی اختلاف رکھ سکتے ہیں۔ مختلف سیاسی جماعت کوسپورٹ اور ووٹ دینا والدین کی نافرمانی کے زمرے میں نہیں آتا۔
  20. زیادہ تر لوگ سوشل میڈیا پر اپنی زندگی کا روشن پہلو ہی دکھاتے ہیں۔ اس لئے اپنے فیس بک فرینڈز سے حسد کرنا چھوڑ دیں، عین ممکن ہے کہ ان کی زندگی کا دوسرا رخ آپ سے بھی زیادہ تاریک ہو!
  21. زندگی میں نرم رویہ اختیار کریں اور دوسروں کی مدد کرتے رہیں۔ زیادہ تر لوگ مشکل وقت میں آپ کو بھی یاد رکھیں گے اور آپ کی مدد کرنے ضرور آئیں گے۔
  22. یاد رکھیں دفتر میں موجود ہر کوئی آپ کا بہترین دوست نہیں بن سکتا۔ اگر آپ ہر کسی کو اپنا دوست بنانا شروع کردیں گے تو پریشانی کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے۔
  23. اگر آپ کم ا زکم 5 مزیدار کھانے بنا سکتے ہیں تو یہ بہت ہی اعلیٰ ہنر ہے۔ ایسا کرنے سے نہ صرف پیسے کی بچت ہوگی بلکہ آپ کی صحت بھی اچھی رہے گی۔
  24. جو نوجوان بڑھتے وزن سے پریشان ہیں اور ورزش کا وقت نہ ملنے کا شکوہ کرتے ہیں، انہیں دن میں صرف 10 منٹ جسمانی ورزش کیلئے مختص کرنے چاہئیں۔
  25. اور سب سے اہم بات یہ کہ اس عمر کے نوجوانوں کو کم از کم ایک اچھا دوست ضرور بنانا چاہیئے ، ضروری نہیں کہ وہ آپ کا سکول، کالج کا ہم جماعت یا پھر دفتر کا ساتھی ہی ہو۔ بس اس بہترین دوست کا کردار اچھا ہو اور اسے آپ کا ہم خیال ہونا چاہیئے۔

لازمی نہیں کہ ہر کوئی ان تمام باتوں پر سختی سے عمل کرنا شروع کردے۔ ہر ایک کی زندگی بالکل مختلف ہوتی ہے۔ عظیم سیاستدان اور 16ویں امریکی صدر ابراہم لنکن  کا قول ہے،  ”آپ جو بھی ہو، بس اچھے انسان بن کر رہو!“۔ زندگی میں کچھ کر دکھانے کیلئے تمام  طرز زندگی بدلنے کی ضرورت نہیں بلکہ صرف وہ بری عادتیں ترک کرنی چاہئیں جو اپنے اور دوسروں کیلئے پریشانی کا باعث بن رہی ہوں۔

Share on FacebookTweet about this on TwitterShare on StumbleUponPin on PinterestShare on LinkedIn